ایک جاپانی پائلٹ کو 28 اکتوبر کو اس وقت گرفتار کر لیا گیا جب وہ  (Heathrow Airport) ہیتھرو ائیرپورٹ سے   جیٹ اڑانے کے لئے تیار تھا گرفتارکرنے کی وجہ اس کے سسٹم میں موجود  خون کی 100 ملی گرام مقدار میں 189 ملی گرام شراب کا ہونا تھا جو مقررہ حد 20ملی گرام سے کافی ذیادہ ہے ۔ اس پائلٹ کی سانس کا ٹیسٹ  فلائٹ کی پرواز سے 50منٹ پہلے کیا گیا۔ کورٹ کی طرف سے اس جرم کی سزا 10 ماہ قید سنائی گئی ہے ۔

جج فلپ میتھیوز نے مزید بتایا کہ سیکیورٹی نے محسوسس کیا تھا کہ شراب کی بو آرہی ہے ۔نشے میں گلیزڈ آنکھیں ہیں ۔ بعد میں ایک افسر نے دیکھا کہ اس سے کھڑے ہونے میں دشواری ہورہی ہے ۔ جسیٹوکاوا کی کوئی مسقل رہائش نہیں تھی ۔ انکے شریک پائلٹ بھی 28 اکتوبر سے پہلے حدسےذیادہ نشہ کرنے کی وجہ سے ملازمت سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں ۔

 

جیسٹواکاوا اپنے اس عمل پر شرمندگی کا اظہار کر چکا ہے اور مسافروں اور انکے اہل خانہ سے معافی مانگنے کا خواہش مند ہے

777بوئنگ طیار میں سوار مسافروں کی تعداد 244 تھی ۔اس واقعہ کے 69 منٹ بعد فلائٹ اپنی منزل ٹوکیو کی طرف روانہ ہوئی ۔  اگست 2017 سے لیکر ابھی تک 19 ایسے کیسز سامنے آچکے ہیں جس میں پائلٹس الکوحل ٹیسٹ میں ناکامی کا سامنا کرچکے ہیں ۔ جاپان میں پائلٹس کی جانب سے حد سے زیادہ  شراب نوشی کی شکایات موصول ہونے کے بعد جاپان کی وزات ٹرانسپورٹ نے پائلٹس کو وارننگ جاری کردی ہے اسی ضمن میں  پرواز سے پہلے  پائلٹس کا الکوحل ٹیسٹ لازمی قرار دے دیا ہے ۔ جاپانی ایئر لائنز جلد بیرون ملک ہوائی اڈوں پر اس سے متعلقہ نیا الکوخل ٹیسٹ نظام متعارف کروائے گی۔   تاکہ مسافروں کو کسی بھی حادثے سے بچایا جاسکے

 

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں